ہزاروں افراد کا امریکی سفارتخانے پر حملہ،امریکا مردہ باد کے نعرے

بغداد: عراق میں ہزاروں افرادنے امریکی سفارتخانے پر حملہ کردیا۔امریکا کے خلاف شدید احتجاج کے دوران امریکی پرچم نذرآتش کردیئے۔فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف اور الجزیرہ کے مطابق بغداد میں موجود امریکی سفارتخانے پر ہزاروں عراقی باشندوں نے دھاوا بول دیا۔

اس دوران سکیورٹی کیمرے تور دیئے گئے ،مظاہرین امریکا مردہ باد کے نعرے لگاتے اور امریکی پرچم بھی جلاتے رہے۔اے ایف پی کے مطابق مظاہرین جمعہ کو امریکی بمباری میں ہلاک ہونے والے دودرجن پیراملٹری فائٹرز کی ہلاکتوں پر برہم ہیں اور مطالبہ کررہے ہیں کہ عراق میں موجود امریکی سفارتخانہ بند کیاجائے۔

دوسری جانب امریکی وزیرخارجہ مائیک پومیو نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس کو دو روز قبل عراق کی گئی فوجی کارروائی کی تفصیلات اور اس کے مقاصد سے آگاہ کیاہے۔امریکی وزیرخارجہ نے بتایاکہ عراق میں فوجی کارروائی ایران کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کی روک تھام اور امریکیوں کے تحفظ کیلئے کی گئی ہے۔

العربیہ کے مطابق امریکی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ عراق اور شام میں دہشت گرد ملیشیاوں کے ٹھکانوں پر کی گئی بمباری کا مقصد امریکی مفادات کا تحفظ ار ایران کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کی روک تھام کرنا ہے۔

وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے ٹویٹر اکاونٹ پر کہا”عراق میں حالیہ حملوں کے بارے میں امریکی رد عمل کے بعد میں نے آج اقوام متحدہ کے سکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس کے ساتھ بات کی ہے“۔ انہیں اس حوالے سے اطمینان دلایا ہے کہ یہ کارروائی دہشت گردی کے خلاف جنگ، امریکی شہریوں اور ان کے مفادات کے تحفظ کے زمرے میں آتی ہے۔“ان کاکہنا تھا کہ’ میں نے واضح کیا کہ ہمارے دفاعی اقدام کا مقصد ایران کو روکنا اور امریکیوں کی جانوں کا تحفظ کرنا ہے۔

 

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here