ویٹر کی زندگی

عدنان احمد 

تعلیم یافتہ دور میں ویٹر کا کام ایک پروفیشن کی شکل اختیار کر چکا ہے۔ دنیا بھر کے تمام چھوٹے بڑے ہوٹل اور ریسٹورینٹ کی انتظامیہ ایسے ویٹر کی تلاش کرتے ہیں جو ان کے پاس آنے والے مہمانوں کا مزاج سمجھتے ہوئے ان کی مہمان نوازی اور خاطرداری کر کے انہیں اتنا زیادہ خوش کردے کہ وہ ہمیشہ کے لیے صرف ان ہی کے مہمان بن جائیں۔

ایسی تعلیمات دینے کے لیے مختلف قسم کے تعلیمی ادارے قائم ہوچکے ہیں جو طالبات کو یہ سمجھانے میں مصروف ہیں کہ آپ نے کس طرح معذز مہمانوں کی مہمان نوازی کر کے انہیں خوش کرنا ہے۔

بہترین ویٹر وہ ہے جو اپنے مہمان کو واضح طور پر یہ دکھا سکے کہ میں خاکسار آپ کے جوتے کی خاک آپ کا تابعدار ایک معمولی سا انسان ہوں جب کہ آپ ایک محترم باعزت مخلوق سے تعلق رکھنے والے فرد۔ برائے مہربانی آپ حکم کریں۔

بے شک وہ ویٹر کسی بھی قسم کی پریشانیوں کا شکار ہو۔ اپنے بوڑھے اور بیمار ماں باپ کے اخراجات، اپنے بچوں کے سکول کی فیس، اپنے گھر کا ماہانہ کرایہ اور درجنوں مختلف قسم کے اخراجات ۔

اپنے تمام اخراجات کو پورا کرنے کے لیے ایسے مہمانوں کو بھی خوش اخلاقی اور عزت و احترام کے ساتھ پیش آنا ہوتا جنہیں ان کے اپنے بھی عزت نہیں دیتے۔کیونکہ اس کے علاوہ اس ویٹر کے پاس کوئی اور آپشن موجود نہیں۔

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here