جرمانے اور پابندی کا خوف، بھارت نے ٹیم پاکستان بھیجنے کا عمل شروع کر دیا

نئی دہلی: بھارت کو بھاری جرمانے اور پابندی کا خوف ستانے لگا جس کے باعث ڈیوس کپ ٹائی کیلئے بھارتی ٹیم پاکستان بھیجنے پر غور شروع کر دیا ہے اور پاکستانی ویزوں کے حصول کا عمل شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

پاکستان اور بھارت میں ڈیوس کپ ٹائی آئندہ ماہ کے آخر میں اسلام آباد میں شیڈول ہے لیکن کچھ بھارتی کھلاڑی دونوں ممالک کے درمیان کشیدہ تعلقات کی وجہ سے دورے کیلئے تیار نہیں، وہ اس حوالے سے اپنی ملکی ٹینس باڈی کو خط بھی لکھ چکے، جس کے بعد آل انڈیا ٹینس ایسوسی ایشن نے انٹرنیشنل باڈی کو تحفظات سے آگاہ کرنے کا عندیہ دیا تاہم ساتھ میں اس نے پاکستانی ویزوں کے حصول کا عمل بھی شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

گزشتہ روز اے آئی ٹی اے کے آفیشلز کی میٹنگ ہوئی جس میں نان پلیئنگ کپتان مہیش بھوپاتی بھی شریک ہوئے، اس میں فیصلہ کیا گیاکہ ٹائی کو نیوٹرل وینیو پر منتقل کرنے کیلئے انٹرنیشنل فیڈریشن پر دباؤ بڑھانے کے ساتھ ویزوں کا عمل شروع کیا جائے۔بھوپاتی نے کہاکہ آل انڈیا باڈی کھلاڑیوں کے تحفظات کو سمجھتی ہیں، کھلاڑی چاہتے ہیں کہ اگر انٹرنیشنل باڈی ہمیں اسلام آباد کیلئے جہاز پر بٹھانا چاہتی ہے تو پھر ہماری سیکیورٹی کی ذمہ داری قبول کرے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ اگر سینئر کھلاڑی تیار نہیں ہوئے تو جرمانے اور پابندی سے بچنے کیلئے بی ٹیم بھی بھیجی جا سکتی ہے، آئی ٹی ایف کی جانب سے پاکستان کی سیکیورٹی کا جائزہ 4 نومبر کو لیا جائے گا جس کے بعد نئی ٹیم سلیکشن ہوگی۔

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here