ڈیم فنڈ کے چندہ میں کوئی چیک اینڈ بیلنس نہیں:فیصل واوڈا

کراچی:وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ نوکریوں سے متعلق اپنی بات پر اب بھی قائم ہوں،ڈیم فنڈ کے چندہ میں کوئی چیک اینڈ بیلنس نہیں، لوگ ڈیم کیلئے فنڈنگ کراس چیک کے ذریعہ بینک ٹو بینک ٹرانزیکشن سے کریں،عوام کو ڈیڑھ سال مہنگائی کا بوجھ اٹھانا پڑے گا.

فیصل واوڑا نے کہا کہ رواں سال اپنی وزارت میں 28ہزار نوکریاں دوں گا، ان میں 7ہزار نوکریاں مہمند ڈیم کی جبکہ 15سے 18ہزار دیامربھاشا ڈیم کی ہیں،پانچ ہفتوں کے اندر نوکریاں ملنے کی علامتیں اورسمت نظر آجائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی احتساب سے ڈری ہوئی ہیں، معیشت کو مستحکم کرنے کیلئے مشکل فیصلے کررہے ہیں، عوام کو کم از کم ڈیڑھ سال مہنگائی کا بوجھ اٹھانا پڑے گا،ثاقب نثار کے ڈیم فنڈز کیلئے سفر میں سرکاری پیسہ نہیں لگ رہا ہے،مہمند ڈیم میں ملک کے اٹھارہ ارب روپے بچا کر دیئے۔

اانہوں نے مزید کہا کہ شاہ محمود قریشی کی عزت کرتا ہوں لیکن جہانگیر ترین کو ہمیشہ سے پسند کرتا ہوں، جہانگیر ترین کی انٹیلی جنس اور ایجوکیشن سے ہم فائدہ اٹھارہے ہیں۔ وہ جیو کے پروگرام ”جرگہ“ میں   گفتگو کررہے تھے۔

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here