جج ارشد ملک مبینہ ویڈیو سکینڈل کیس، سپریم کورٹ فیصلہ کل سنائے گی

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کیس کا فیصلہ کل سنائے گی،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے 20 اگست کو کیس کافیصلہ محفوظ کیاتھا۔

20 اگست کو وفاقی تحقیقات ادارے (ایف آئی اے)نے جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل پررپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرائی تھی جس میں نئے انکشافات سامنے آئے ہیں ،رپورٹ کے مطابق ایف آئی اے نے ویڈیوکافرانزک آڈٹ بھی کرالیاہے۔

رپورٹ کے مطابق جج ارشدملک نے 2 ماہ میں 2 عمرے کئے،ارشدملک 23 مارچ سے 4 اپریل 2019 تک سعودی عرب میں رہے،ارشدملک 28 مئی سے 8 جون تک دوبارہ سعودی عرب میں رہے،رپورٹ کے مطابق ارشدملک کی 03-2002 میں بنائی گئی ویڈیوسے مریم نوازنے اظہارلاتعلقی کیا۔

رپورٹ کے مطابق جج کی مبینہ ویڈیو 2003 میں ملزم میاں طارق نے بنائی،ویڈیو کے حوالے سے احسن اقبال،خواجہ آصف،عطااللہ تارڑسے بھی تفتیش کی گئی،تینوں رہنماؤں نے بھی شہبازشریف والاموقف اپنایا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ارشدملک کی ویڈیوناصربٹ نے ان کے گھرمیں ریکارڈکی، سپریم کورٹ جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کیس کا فیصلہ کل سنائے گی۔

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here