نیب کو اسی طرح رہنے دو جیسے ہم نے بگھتا سب بھگتیں۔نوازشریف

لاہور: سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہاہے کہ ہمارے چار سال میں ڈالر اتنا نہیں بڑھا جتنا یہ چند ماہ میں ہو گیا ہے ، ملکی معیشت یوٹرن نہیں ، کام کرنے سے مستحکم ہوتی ہے، ہمارے دور میں ڈالر بغیر پوچھے تو دس پیسے بھی اوپر نہیں جاتا تھا ، کہتے ہیں کہ ڈالر مصنوعی طریقے سے برقرار رکھا تو یہ بھی رکھ لیں اور وہ طریقہ بھی ہمیں بتا دیں۔

احتساب عدالت میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو میں سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ کہتے ہیں کہ ڈالرمصنوعی طریقے سے برقرار رکھا تو یہ بھی رکھ لیں اور یہ بھی بتا دیں کہ ڈالر کی قیمت برقرار رکھنے کیلئے وہ مصنوعی طریقہ کار کریا ہے ،ملکی معیشت کیلئے کرنسی کومستحکم ہونا چاہیے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ دنیا 2013 سے 2017 تک معیشت کو مضبوط اور متوازن کہتی تھی ، ہم سٹاک ایکس چینج کو 19 ہزار سے 53 ہزار پر لے کر گئے ،ہمارے دورمیں ٹماٹر 20 روپے کلوتھا ،اب 200 سے زیادہ ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مشرف نے جلاوطن کیا خود مرضی سے نہیں گئے،کوئی تو پوچھے احتساب کس طرح ہو رہا ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ نیب جس طرح ہے اسی طرح رہنا چاہیے ہم تو بھگت چکے ہیں باقی بھگتیں، نیب عمران خان کے ہیلی کاپٹر کا بھی احتساب کرے عمران کے باقی خاندان کے ذرائع آمدن کا بھی احتساب کرے۔

‏انہوں نے کہا کہ ہمارا تو ذرائع آمدن کا ریکارڈ 1937 سے موجود ہے،سیاست میں آنے سے پہلے زیادہ خوشحال تھے سیاست میں آنے کے بعد پریشانیوں میں اضافہ ہوا،ملکی معیشت ہر چیز کی متحمل ہو سکتی ہے ماسوائے موجودہ حکومت کے،‏ملکی معیشت یو ٹرن سے نہیں سچ بولنے سے مستحکم ہوتی ہے، ذاتی وجوہات کی بنا پر دل نہیں کرتا کہ کچھ بولوں، شہباز شریف کے خلاف تفتیش میں کیا نکلا، آج نہیں تو کل قوم اس کا جواب مانگے گی۔

شہبازشریف کو اڑھائی مہینے کیوں بند رکھا، نہ صاف پانی سے کچھ نکلا نا نواز شریف نے کہا کہ آشیانہ سے کچھ نکلا، ‏شہبازشریف کے کام کاگواہ ہوں،میں حق اور سچ کی بات کرتا ہوں کس قدر اس شخص کو دکھ ہوا ہو گا،بہت ساری چیزوں کو میں بھی محسوس کرتا ہوں کیا میں اور شہباز شریف اس سزا کے مستحق تھےجو دی گئی، میں اپنی بیوی کو بستر مرگ پر چھوڑ کر آیا اورمجھے ایئرپورٹ سےگرفتار کر کےجیل بھیج دیا۔

تبصرے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here